***Poetry***

Urdu Poetry

٭٭٭ںظم ٭٭٭

میں اک پتھر سی لڑکی ہوں

یہی کہتے ہو تم بھی ناں

کیا یہ تم سمجھتے ہو

کسی بھی چیز کا مجھ پر کوئی اثر نہیں ہوتا

تو سنو

! مجھے حالات نے پتھر بنا ڈالا

مجھے محسوس ہوتی ہے

چھبن اس دھوپ کی جاناں

مجھے بھی سایہ چاہئے

تمہارا سخت لہجہ بھی مجھے محسوس ہوتا ہے

مجھے اپنوں کی باتوں کے وہ طنز تیر لگتے ہیں

میری بھی خواہشیں ہیں کچھ

کوئی تو رازداں بھی ہو

جسے اپنا میں کہ پاؤں

جسے اپنا میں حالِ دل سنا پاؤں

بتا پاؤں مجھے اعتبار بھی چاہیے

میں ہوں اک عام سی لڑکی

جسے بچپن سے اپنوں نے بس اتنا سکھایا

ہے کوئی خواہش نہیں کرنا

اک زندہ سے لاشے کو

ان رسموں، رواجوں نے 

 مرے خوابوں کو آنکھوں میں

مری الہڑ جوانی کو

وقت نے مار ڈالا ہے

بہت بے بس دیکھا ہے

خود کو خود سے میں نے بھی ہاں

ٹھیک ہی تم بھی کہتے ہو

صحیح سمجھا ہے تم نے بھی

میں اک پتھر سی لڑکی ہوں

اروشمہ خان اروش

٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭

Digiprove seal
Copyright secured by Digiprove © 2019 Muhammad Yawar Hussain

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: